Roz karte hain Baaten madine ki ham
Ab to Aaqa madine Bula lijye
apne shere muqadas ki thandi hawa
is gunahgar ko bhi ata kijye

روز کرتے ہیں باتیں مدینہ کی ہم
اب تو آقا مدینہ بلا لیجیے
اپنے شہر مقدس کی ٹھنڈی ہوا
اس گناہگار کو بھی عطا کیجیے

haj ke din aagaye qafle jachuke
sange aswad ke bose bhi wo pa chuke
kuch hain masroof tayariyo main abhi
un main shamil hame bhi shaha kijye

حاضری کے دن آگئے قافلے جاچکے
حجج کے دن آگَے قافلے جا چکے
سنگ اسود کے بوسے بھی وہ پا چکے
کچھ ہے مصروف تیاریوں میں ابھی
ان میں شامل ہمیں بھی شہا کیجیے

Aao is shaan se sab khataye dhule
lab pe naate ho aankho se aaso bahe
pohcho sehne haram se mawajhe pe jab
magfirat ki sanad phir dila dlijye

آوں اس شان سے سب خظائیں دھلیں
لب پہ نعتیں ہو آنکھوں سے آنسوں بہے
پہچوں سہن حرم سے مواجہ پہ جب
مغفرت کی سند پھر دلا دیجیے

 

ujle kapde pehen kar ke darbar main
eid ho jaye jab pohcho sarkar main
jis trha eidi dete hai aqa bade
mera daman hara o bhara kijye

اجلے کپڑے پہن کر کے دربار میں
عید ہو جائے جب پہچوں سرکار میں
جس طرح عیدی دیتے ہیں آقا بڑے
میری دامن کو ہرا و بھرا کیجیے

na dikhawe duniya ka malo manal
na kare isko maroob jaho jamal
bas tujhi ko sunye ye tera bilal
aysa ikhlas is ko ata kijye