Owais Razvi Qadri Siddiqui
Sufi Singer

Mahe Ramzan Ki Fazilat – رمضان کی فضیلت

1,714

ماہ رمضان کی فضیلت کا اندازہ اس حدیث پاک سے بخوبی لگایا جاسکتا ہے جو اسے دوسرے مہینوں سے منفرد اور ممتاز کرتا ہے: جب رمضان کی پہلی رات ہوتی ہے تو شیاطین اور سرکش جنات قید کر دئیے جاتے ہیں اور دوزخ کے سارے دروازے بند کر دئیے جاتے ہیں،پھر اس کا کوئی دروازہ کھلا نہیں رہتا اور جنت کے تمام دروازے کھول دئیے جاتے ہیں پھر اس کا کوئی دروازہ بند نہیں رہتا اور اعلان کرنے والا (فرشتہ) یہ اعلان کرتا ہے کہ، اے بھلائی (یعنی نیکی و ثواب) کے طلب گار ! (اللہ تعالیٰ کی طرف) متوجہ ہو جا اور اے برائی کا ارادہ رکھنے والے ! برائی سے باز آ جا کیونکہ اللہ تعالیٰ لوگوں کو آگ سے آزاد کرتا ہے (یعنی اللہ تعالیٰ اس ماہ مبارک کے وسیلے میں بہت لوگوں کو آگ سے آزاد کرتا ہے اس لیے ہوسکتا ہے کہ تو بھی ان لوگوں میں شامل ہو جائے) اور یہ اعلان (رمضان کی) ہر رات میں ہوتا ہے۔(ترمذی و ابن ماجہ)

یہ حدیث مبارکہ رمضان کی برکتوں کا اندازہ لگانے کے لیے کافی ہے کہ جب رمضان آتا ہے اللہ تعالیٰ کے حکم سے شیاطین قید کر دئیے جاتے ہیں،جنت کے دروازے کھول دئیے جاتے ہیں اور دوزخ کے دروازے بند کر دئیے جاتے ہیں، شیاطین جن کا کام انسان کو اچھے کاموں سے روکنا اور برے کاموں کے سبز باغ دکھانا ہے،اس ماہ میں ان ظالمانہ اور گندے کاموں سے روک دئیے جاتے ہیں۔ چنانچہ اس بات کا سب سے بڑا ثبوت یہ ہے کہ اس ماہ رمضان میں اکثر گناہ گار لوگ گناہوں سے بچتے ہیں اور اللہ تعالیٰ کی طرف متوجہ ہوتے ہیں لیکن سوچنے کی بات یہ ہے کہ کیا ہر ایک شخص جو رمضان پالے اور کسی طرح بھی گزار دے کیا وہ اس کی برکتوں سے فیض یاب ہو جاتا ہے۔ یقیناً ایسا نہیں ہے۔ برکتوں سے اپنی جھولیاں تو وہی لوگ بھرتے ہیں جو اس ماہ مبارک کو سوچ سمجھ کر اس نیت سے گزارتے ہیں کہ ان کا نفس پاک ہو جائے اور اس کی کجی ختم ہو جائے۔

لہذا ضروری ہے کہ ہم رمضان سے استفادے کا پکا ارادہ کریں۔ رمضان سے پورا پورا فائدہ اٹھانے کے لیے یہ بھی ضروری ہے کہ ہم اپنی مصروفیات کو پیش نظر رکھتے ہوئے اپنے لیے ایک ایسا نظام اوقات مرتب کریں جس میں عبادت اور مطالعہ قرآن و حدیث کے لیے زیادہ سے زیادہ وقت نکالا جائے۔ اللہ تعالیٰ تمام مسلمانوں کو اس ماہ مبارک سے پوری طرح فائدہ اٹھانے کی توفیق عطا کرے کہ توفیق بھی تو وہی دیتا ہے مگر ان کو جو طلب کرتے ہیں یہ نہیں کہ توفیق کے انتظار میں ہاتھ پیر جوڑ کر بیٹھے رہیں۔ اللہ تعالیٰ تو اپنی محبوب قوم کی حالت بھی اس وقت تک نہیں بدلتا جب تک کہ وہ خود کوشش نہ کرے۔

Comments
Loading...