Owais Razvi Qadri Siddiqui
Sufi Singer

Sunte Hain Ki Mehshar Mein Sirf Unki Rasai Hai – سنتے ہیں کہ محشر میں صرف اُن کی رسائی ہے

0 192

سنتے ہیں کہ محشر میں صرف اُن کی رسائی ہے
گر اُن کی رسائی ہے لو جب تو بن آئی ہے

مچلا ہے کہ رحمت نے امید بندھائی ہے
کیا بات تری مجرم کیا بات بنائی ہے

سب نے صف محشر میں للکار دیا ہم کو
اے بے کسوں کے آقا اب تیری دہائی ہے

یوں تو سب انھیں کا ہے پر دل کی اگر پوچھو
یہ ٹوٹے ہوئے دل ہی خاص اُن کی کمائی ہے

زائر گئے بھی کب کے دِن ڈھلنے پہ ہے پیارے
اٹھ میرے اکیلے چل کیا دیر لگائی ہے

بازار عمل میں تو سودا نہ بنا اپنا
سرکار کرم تجھ میں عیبی کی سمائی ہے

گرتے ہووں کو مژدہ سجدے میں گرے مولیٰ
رو رو کے شفاعت کی تمہید اُٹھائی ہے

اے دل یہ سلگنا کیا جلنا ہے تو جل بھی اُٹھ
دَم گھٹنے لگا ظالم کیا دھونی رَمائی ہے

مجرم کو نہ شرماؤ احباب کفن ڈھک دو
منھ دیکھ کے کیا ہو گا پردے میں بھلائی ہے

اب آپ ہی سنبھالیں تو کام اپنے سنبھل جائیں
ہم نے تو کمائی سب کھیلوں میں گنوائی ہے

اے عشق تِرے صدقے جلنے سے چھٹے سستے
جو آگ بجھا دے گی وہ آگ لگائی ہے

حرص و ہوس ِ بد سےدل تو ، بھی ستم کر لے
تو ہیں نہیں بے گانہ دنیا ہی پرائی ہے

ہم دل جلے ہیں کس کے ہٹ فتنوں کے پرکالے
کیوں پھونک دوں اک اُف سے کیا آگ لگائی ہے

طیبہ نہ سہی افضل مکّہ ہی بڑا زاہد
ہم عشق کے بندے ہیں کیوں بات بڑھائی ہے

مطلع میں یہ شک کیا تھا واللہ رضا واللہ
صرف اُن کی رسائی ہے صرف اُن کی رسائی ہے

Sunte hain ki mehshar mein sirf unki rasai hai
Gar unki rasaaee hai lo jab to ban aayi hai

Machla hai ki rehmat ne ummeed bandhai hai
Kya baat teri mujrim kya baat banai hai

Sab ne safe mehshar mein lalkaar diya hum ko
Aye bekason ke Aaqa ab teri duhai hai

Yun to sab unhi ka hai par dil ki agar poocho
Yeh toote hue dil hi khaas unki kamai hai

Zaair gaye bhi kab ke din dhalne pe hai pyaare
Uth mere akele chal kya der lagaaee hai

Baazare amal mein toh sauda na bana apna
Sarkar karam tujh mein aibee ki samai hai

Girte huwo ko muzda sajde mein gire Maula
Ro Ro ke shafa’at ki tamheed uthai hai

Aye dil yeh sulagna kya jalna hai to jal bhi uth
Dum ghutne laga zaalim kya dhooni ramai hai

Mujrim ko na sharmao ahbaab kafan dhak do
Muh dekh ke kya hoga parde mein bhalai hai

Ab aap hi sambhalein toh kaam apne sambhal jaayein
Humne to kamai sab khelon mein ganwai hai

Aye ishq tere sadqe jalne se choote saste
Joh aag bujha degi woh aag lagai hai

Hirso hawase bad se dil tu bhi sitam kar le
Tu hi nahi begana dunya hi parai hai

Hum dil jale hain kiske haat fitnon ke parkaale
Kyun foonk du ik uf se kya aag lagai hai

Taiba na sahi Afzal Makkah hi bada zaahid
Hum ishq ke bande hain kyun baat badhai hai

Matla mein yeh shak kya tha wallah Raza wallah
Sirf unki rasai hai sirf unki rasai hai

Comments
Loading...