حضور غوثِ اعظم رحمتہ اللّٰه علیہ کی بیویاں ( آپ رحمتہ اللّٰه علیہ کی چار بیویاں تھیں ) بھی آپ رحمتہ اللّٰه علیہ کے رُوحانی کمالات سے فیض یاب تھیں۔آپ رحمتہ اللّٰه علیہ کے صاحبزادے حضرت شیخ عبدالجبار رحمتہ اللّٰه علیہ اپنی والدہ ماجدہ کے متعلق بیان کرتے ہیں کہ جب بھی والدہ محترمہ کسی اندھیرے مکان میں تشریف لے جاتی تھیں تو وہاں چراغ کی طرح روشنی ہو جاتی تھی۔ایک موقع پر میرے والد محترم غوثِ پاک رحمتہ اللّٰه علیہ بھی وہاں تشریف لے آئے،جیسے ہی آپ رحمتہ اللّٰه علیہ کی نظر اس روشنی پر پڑی تو وہ روشنی فوراً غائب ہو گئی،تو آپ رحمتہ اللّٰه علیہ نے اِرشاد فرمایا کہ:

” یہ شیطان تھا جو تیری خدمت کرتا تھا اسی لیے میں نے اسے ختم کر دیا۔اب میں اس روشنی کو رحمانی نُور میں تبدیل کیے دیتا ہوں۔ ”

اس کے بعد والدہ محترمہ جب بھی کسی تاریک مکان میں جاتی تھیں تو وہاں ایسا نُور ہوتا جو چاند کی روشنی کی طرح معلوم ہوتا تھا۔

( بہجةُ الاسرار و معدن الانوار،ذِکر فضل اصحابہ،صفحہ:۱۹٦ )